افغان سرزمین کسی کے خلاف استعمال نہیں ہو گی: طالبان کی چین کو یقین دہانی

افغان سرزمین کسی کے خلاف استعمال نہیں ہو گی: طالبان کی چین کو یقین دہانی

افغان طالبان نے چین کو یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ افغانستان کی سرزمین کو دوسرے ملک کے خلاف سازشوں کے لیے استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔

فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق طالبان ترجمان محمد نعیم نے بدھ کو بتایا کہ چینی حکام سے مذاکرات کے لیے طالبان کا ایک اعلیٰ سطحی وفد چین میں موجود ہے۔

نو رکنی وفد کی سربراہی طالبان کے شریک بانی ملا عبدالغنی برادر کر رہے ہیں۔

محمد نعیم نے  اے ایف پی کو بتایا کہ ’امارات اسلامی نے چین کو یقین دلایا ہے کہ افغان سرمین کسی ملک کی سلامتی کے خلاف استعمال نہیں ہوگی۔‘

انہوں نے مزید کہا کہ ’چین نے بھی وعدہ کیا ہے کہ وہ افغانستان کے معاملات میں مداخلت نہیں کرے گا اور مسائل کے حل اور امن کے قیام میں معاونت کرے گا۔‘

خیال رہے کہ امریکی فوج کے انخلا کا اعلان ہوتے ہی طالبان نے افغانستان کے مختلف علاقوں میں قبضے شروع کر دیے ہیں جن میں پاک افغان سرحد اور چین کی سرحد سے متصل کچھ علاقے شامل ہیں۔

افغانستان میں جاری بحران کو پر امن طریقے سے حل کرنے کے پاکستان، روس، چین سمیت مختلف ممالک کوششیں کر رہے ہیں۔

محمد نعیم نے، جو خود بھی وفد کا حصہ ہیں، بتایا کہ دو روزہ دورے کے پہلے دن وفد نے چینی وزیر خارجہ وانگ ای سے ملاقات کی اور یہ ملاقات تیانجن شہر میں ہوئی۔

خیال رہے کہ افغان سرزمین کے کسی کے خلاف استعمال نہ ہونے کا بیان ایک ایسے وقت پر سامنے آیا ہے جب کچھ دن قبل عسکریت پسندوں نے چین کے علاقے سنکیانگ سے ملحقہ صوبہ بدخشاں کے ضلعے واکھان پر قبضے کا دعویٰ کیا تھا

انڈیپینڈینٹ اردو

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: