ومبلڈن اوپن: فیڈرر کو 2002 کے بعد پہلی بار اسٹریٹ سیٹ میں شکست

ومبلڈن اوپن: فیڈرر کو 2002 کے بعد پہلی بار اسٹریٹ سیٹ میں شکست

عالمی شہرت یافتہ سوئس ٹینس اسٹار راجر فیڈرر ومبلڈن اوپن ٹینس ٹورنامنٹ میں 2002 کے بعد پہلی مرتبہ اسٹریٹ سیٹ میں شکست کھا کر ایونٹ سے باہر ہو گئے ہیں۔

سال کے اہم ترین گرینڈ سلیم ومبلڈن اوپن کے کوارٹر فائنل میں 20 مرتبہ کے گرینڈ سلیم چیمپیئن راجر فیڈرر کا مقابلہ 24سالہ پولش نوجوان ہوبرٹ ہرکاسز سے تھا۔

سوئس اسٹارکو پہلے ہی سیٹ میں اس وقت بڑا دھچکا لگا جب نوجوان کھلاڑی نے 3-6 سے کامیابی سمیٹ کر ایک سیٹ کی سبقت حاصل کر لی۔

اگلے سیٹ میں دونوں کھلاڑیوں میں زبردست مقابلہ ہوا لیکن فتح نے ایک مرتبہ پھر پولینڈ کے ہوبرٹ کے قدم چومے جو 6-7 سے سیٹ اپنے نام کرنے میں کامیاب رہے۔

تیسرے سیٹ میں فیڈرر بالکل بے بس نظر آئے اور چند ہی منٹ میں 0-6 سے سیٹ اور میچ ہار کر ومبلڈن اوپن سے باہر ہو گئے۔

20 مرتبہ کے گرینڈ سلیم چیمپیئن کو میچ میں 3-6، 6-7 اور 0-6 سے اسٹریٹ سیٹ میں شکست کا منہ دیکھنا پڑا اور یہ 2002 کے بعد پہلا موقع تھا کہ انہیں ومبلڈن اوپن میں اسٹریٹ سیٹ سے شکست ہوئی ہو۔

8

مرتبہ ٹائٹل جیتنے والے فیڈرر کی یہ 119 مقابلوں میں ومبلڈن اوپن میں محض 14ویں شکست ہے اور اس کے ساتھ ہی ممکنہ طور پر لندن میں ہونے والی اس ایونٹ میں ان کا سورج غروب ہو گیا ہے۔

فیڈرر اگلے ماہ 40سال کے ہونے والے ہیں اور کھیل میں گرتی ہوئی کارکردگی کے سبب جلد ہی ان کی جانب سے انٹرنیشنل ٹینس سے ریٹائرمنٹ کا اعلان کیے جانے کی توقع ہے۔

دوسری جانب ومبلڈن کے لیے چیمپیئن تصور کیے جانے والے نوواک جوکووچ نے ٹائٹل کی جانب سے پیش قدمی جاری رکھی اور کوارٹر فائنل میں اسٹریٹ سے فتح حاصل کر کے سیمی فائنل میں جگہ بنا لی۔

اگر سربیا کے عالمی نمبر ایک کھلاڑی یہ ٹائٹل جیت جاتے ہیں تو فیڈرر اور رافیل نڈال کی طرح ان کے بھی گرینڈ سلیم ٹائٹلز کی تعداد 20 ہو جائے گی۔

ڈان نیوز

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: