کابل کے ہوائی اڈے پر بہت جلد سنگین حملے کا خدشہ ہے: برطانیہ

کابل کے ہوائی اڈے پر بہت جلد سنگین حملے کا خدشہ ہے: برطانیہ

برطانوی مسلح افواج کے وزیر جیمز ہیپی نے جمعرات کو کہا کہ کابل کے ہوائی اڈے پر بہت جلد سنگین حملے کا خدشہ ہے۔

خبر رساں ایجنسی اے ایف پی نے بتایا کہ برطانوی حکومت نے اپنے شہریوں کو حامد کرزئی انٹرنیشنل ایئرپورٹ سے دور رہنے کی تنبیہ کی ہے۔

ہیپی نے ٹائمز ریڈیو کو بتایا، ’اس ہفتے کے دوران موصول ہونے والی رپورٹس کہیں زیادہ قابل اعتماد بن گئی ہیں اور یہ ناگزیر اور سنگین نوعیت کا خطرہ ہے۔‘

برطانیہ نے بدھ کو اپنے شہریوں کو کابل کے ہوائی اڈے سے دور رہنے کو کہا ہے، جہاں طالبان کے افغانستان پر قبضے کے بعد انخلا کی پروازوں میں سوار ہونے کی امید میں بہت بڑا ہجوم جمع ہے۔

دفتر خارجہ اور دولت مشترکہ کے دفتر نے اپنی ویب سائٹ پر لکھا کہ ’کابل میں حامد کرزئی بین الاقوامی ہوائی اڈے پر سفر نہ کریں کیونکہ یہاں دہشت گردی کا سنگین خطرہ ہے۔‘

تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق برطانیہ نے 13 اگست سے اب تک 11 ہزار 474 افراد کو نکالا ہے، جن میں چھ ہزار 946 افغان شہری شامل ہیں۔

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: